تازہ ترینشوبز

لاہور کی عدالت نے صبا قمر اور بلال سعید کے وارنٹ گرفتاری جاری کر دیئے

لاہور کی ایک سیشن عدالت نے وزیر خان مسجد میں متنازعہ میوزک ویڈیو شوٹ سے متعلق کیس میں اداکار صبا قمر اور گلوکار بلال سعید کے وارنٹ گرفتاری جاری کر دیئے ہیں۔

صبا قمر اور بلال سعید کے عدالت میں پیش نہ ہونے کے بعد بدھ کو ہونے والی سماعت میں یہ فیصلہ کیا گیا۔ جوڈیشل مجسٹریٹ جویریہ منیر بھٹی نے کیس کی سماعت کی۔

وارنٹ گرفتاری 5 اکتوبر کے لیے جاری کیے گئے ہیں۔

گزشتہ سال اکبری گیٹ پولیس نے ان کے خلاف وکیل فرحت منظور کی شکایت پر ایک میوزک ویڈیو کی شوٹنگ کے دوران رقص کرکے مسجد کے تقدس کو پامال کرنے کا مقدمہ درج کیا تھا۔

ایف آئی آر پاکستان پینل کوڈ کی دفعہ 295 (کسی بھی طبقے کے مذہبی جذبات کو مجروح کرنے کے لیے جان بوجھ کر اور بدنیتی پر مبنی کارروائیوں) کے تحت درج کی گئی تھی۔

صبا قمر اور بلال سعیدکو 23 اگست کو اجتماعی طور پر 50 ہزار روپے کے ضمانتی مچلکوں کے خلاف ضمانت قبل از گرفتاری دی گئی۔

چنانچہ اداکار ہ اور گلوکار نے متنازعہ ویڈیو شوٹ پر معذرت کی۔ بلال سعید نے کہا کہ وہ لاہور کی وزیر خان مسجد میں گولی مار دی گئی پوری تسلسل کو ہٹا رہے ہیں۔

گلوکار نے اپنے انسٹاگرام اکاؤنٹ پر ایک طویل معافی بھی اپ لوڈ کی اور کہا کہ وہ اورصبا قمر دونوں کو احساس ہے کہ پچھلے کچھ دنوں میں جو کچھ ہوا ہے اس سے جذبات کو شدید تکلیف پہنچی ہے۔

دوسری جانب صبا قمر نے ٹوئٹس کی ایک سیریز میں تنقید کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ یہ کلپ "ایک نکاح کے منظر کو پیش کرنے والی میوزک ویڈیو کا پیش خیمہ ہے”۔

تاریخی مسجد میں صبا قمر کا بلال سعید کے ساتھ گھومنے کا ایک مختصر کلپ سوشل میڈیا پر وائرل ہوا۔ ویڈیو نے مذہبی حلقوں کی جانب سے شدید رد عمل کا اظہار کیا۔ ہنگامہ آرائی کے بعد وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے معاملے کا نوٹس لیا اور ذمہ داروں کے خلاف کارروائی کا حکم دیا۔

ان کے خلاف مذمتی قرارداد بھی پنجاب اسمبلی میں ایم پی اے سمیرا کومل نے پیش کی۔ انہوں نے کہا کہ مسجد کے تقدس کو پامال کرنے والوں کے خلاف کارروائی ہونی چاہیے۔

ڈائریکٹر جنرل اور سیکریٹری مذہبی امور نے پروڈکشن ہاؤس کے خلاف بھی محکمانہ انکوائری شروع کی۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button