تازہ ترینٹیکنالوجی

لارج میگلینکا کلاؤڈ کہکشاں میں نایاب بلیک ہول

اس ضمن میں سائنس دانوں نے منٹ بلیک ہول کو دیکھا ہے۔ محققین کے مطابق معلوم ہوتا ہے کہ ہماری ملکی ویکشاں کی پڑوسی کہکشاں لارج میگلینِک کلاؤڈ میں ایک اسٹیل ماس بلیک ہول موجود ہے۔ وہ ستارہ جو اس بلیک ہو کا سبب بنا وہ بغیر کسی حادثے کا خاتمہ ہوا۔

اس سے قبل بلیک ہول والے آپس میں ہو رہے ہیں لیکن محققین کے مطابق یہ بلیک ہول اپنے ریال کا بلیک ہو گا۔ ایمسٹرڈم یونیورسٹی سے تعلق رکھنے والے ٹومر شینر، جو تحقیق کے مصنف ہیں ان کا کہنا ہے کہ پہلی بار ہماری کسی بلیک ہول کی ٹیم کو مسترد کرنے سے انکار، اس کی تصدیق اور اس بلیک ہول کی تلاش انتہائی مشکل ہے۔ تو

ماہرینِ فلکیات کے مطابق ڈورمنٹ بلیک ہولز کی صورت حال میں نسب میں عام ہے لیکن ہم ان کے متعلق بہت کم جانتے ہیں اور ان مصدقہ مثالیں بہت نایاب ہیں۔ ان کی نشان دہی میں دشواری کی وجہ یہ ہے کہ ڈوورمنٹ ہونے کی وجہ سے یہ آپ سے زیادہ رابطہ نہیں کرتا۔

setTimeout(function()
!function(f,b,e,v,n,t,s)
if(f.fbq)return;n=f.fbq=function()n.callMethod?
n.callMethod.apply(n,arguments):n.queue.push(arguments);
if(!f._fbq)f._fbq=n;n.push=n;n.loaded=!0;n.version=’2.0′;
n.queue=[];t=b.createElement(e);t.async=!0;
t.src=v;s=b.getElementsByTagName(e)[0];
s.parentNode.insertBefore(t,s)(window,document,’script’,
‘https://connect.facebook.net/en_US/fbevents.js’);
fbq(‘init’, ‘836181349842357’);
fbq(‘track’, ‘PageView’);
, 6000);

/*setTimeout(function()
(function (d, s, id)
var js, fjs = d.getElementsByTagName(s)[0];
if (d.getElementById(id)) return;
js = d.createElement(s);
js.id = id;
js.src = "//connect.facebook.net/en_US/sdk.js#xfbml=1&version=v2.11&appId=580305968816694”;
fjs.parentNode.insertBefore(js, fjs);
(document, ‘script’, ‘facebook-jssdk’));
, 4000);*/


Source link

Related Articles

Back to top button